ایم 9 کے سوا موٹرویز اور نیشنل ہائی ویز پر اضافی جرمانوں کا اطلاق

فوٹو: فائل
فوٹو: فائل

نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس کی جانب سے نافذ کیے گئے نئے جرمانوں کا اطلاق کر دیا گیا۔

ترجمان موٹروے پولیس کے مطابق ملک بھر کے نیشنل ہائی ویز اور موٹرویز پر سفر کے دوران ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے افراد کو اب نئی شرح سے جرمانہ ادا کرنا ہوں گے۔

موٹروے پولیس ذرائع کے مطابق ان جرمانوں کا اطلاق یکم اکتوبر کی رات 12 بجے سے ہوگا۔ موٹروے پولیس ذرائع کے مطابق جرمانوں کی اس نئی شرح کا اطلاق موٹروے ایم نائن پر سفر کرنے والوں کے لیے نہیں ہے۔

کراچی سے حیدرآباد کے درمیان سفر کرنے والے شہری خلاف ورزی کی صورت میں پرانی شرح کے جرمانے ادا کریں گے۔

نئی شرح کے مطابق موٹر وے پر بغیر لائٹ گاڑی چلانے کا جرمانہ ایک ہزار روپے سے بڑھا کر پانچ ہزار روپے کیا گیا ہے۔

اسی طرح ایمرجنسی وہیکل کے راستے میں رکاوٹ بننے کی صورت میں جرمانہ 500 کی بجائے 5 ہزار ادا کرنا ہوگا۔

ڈرائیونگ لائسنس کے بغیر گاڑی چلانے کی صورت میں بھی جرمانہ 750 نہیں اب 5 ہزار روپے دینا ہوگا۔

پرائیویٹ گاڑی پر قانون نافذ کرنے والے اداروں یا پولیس کی غیر قانونی لائٹس لگانے پر جرمانہ 5 ہزار روپے کیا گیا ہے۔

گاڑی پر فینسی نمبر پلیٹ لگا کر موٹروے پر جانے والی گاڑی کو ایک ہزار روپے جرمانہ دینا ہوگا۔

ڈرائیوروں کے لیے اذیت کا سبب بننے والی لائٹس کے استعمال پر 2 ہزار روپے جرمانہ رکھا گیا ہے۔

سیٹ بیلٹ نہ پہننے والوں کو 1500 روپے جرمانہ دینا ہوگا جبکہ موٹروے پر رکنے کے اشارے کی خلاف ورزی کی صورت میں جرمانہ 500 کی بجائے 3 ہزار روپے کیا گیا ہے۔

ون وے کی خلاف ورزی کی صورت میں بھی جرمانہ 500 کی بجائے 2500 کیا گیا ہے، تیز رفتاری کی صورت میں جرمانہ 750 سے بڑھا کر 2500 روپے کر دیا گیا ہے۔

ممنوعہ جگہ سے اوورٹیک کرنے کی صورت میں 300 نہیں اب 1500 روپے جرمانہ دینا ہوگا۔

دھواں دینے والی گاڑی کو 1250، بغیر رجسٹریشن کی گاڑی کو 2 ہزار روپے، غفلت لاپرواہی کرنے والے ڈرائیورز اور بغیر اشارے کے لائن تبدیل کرنے والے کو ایک ایک ہزار روپے جرمانہ دینا ہوگا۔ موٹروے پر لائن توڑنے کی صورت میں بھی جرمانہ ایک ہزار روپے رکھا گیا ہے۔




Supply hyperlink

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to Top